پاکستان انٹرنیشنل پریس ایجنسی

کراچی پولیس کے شہید ہیڈ کانسٹیبل فیاض علی کی نماز جنازہ گارڈن ہیڈ کواٹر میں ادا کر دی گئی۔

کراچی پولیس کے شہید ہیڈ کانسٹیبل فیاض علی کی نماز جنازہ گارڈن ہیڈ کواٹر میں ادا کر دی گئی۔شہر میں دہشتگردی کے خاتمے اور قیام امن کیلئے جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والے جوان محکمے کا فخر ہیں۔

ہیڈ کانسٹیبل فیاض علی نے ڈکیتی کی واردات میں ملوث ڈاکووں سے فائرنگ کے تبادلے میں جام شہادت شہید نوش کیا۔شہید پولیس اہلکار چونکہ ڈیوٹی کیلئے تھانے جا رہا تھا اس لئے سادہ لباس میں ملبوس تھا، مینا بازار کے قریب دو ڈاکوؤں کو شہری کو لوٹتے ہوئے دیکھا تو شہری کی مدد کیلئے ملزمان کو روکنے کی کوشش کی۔

شہید نے بہادری اور دلیری سے شہری کی جان اور مال کی حفاظت کرتے ہوئے ایک ڈاکو کو ہلاک کیا جبکہ ہلاک ڈاکو کے ساتھی کی گولی سے شدید زخمی حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا جہاں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جام شہادت نوش کیا۔شہید پولیس اہلکار نے اپنے فرض کی راہ میں جان کا نذرانہ پیش کیا۔

شہید کی نماز جنازہ میں آئی جی سندھ، ایڈیشنل آئی جی کراچی سمیت سینئیر پولیس افسران اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے افسران نے بھی شرکت کی۔شہید ہیڈ کانسٹیبل کی عمر 40 سال اور وہ تھانہ عزیز آباد میں تعینات تھے، شہید نے پسماندگان میں بیوہ اور تین بچے چھوڑے ہیں۔شہید پولیس ہیڈ کانسٹیبل نے 1999 میں پولیس فورس جوائن کی اور کراچی کے مختلف تھانوں پر ایمانداری اور بہادری سے اپنے فرائض سرانجام دیتے ہوئے مورخہ 08 اکتوبر 2020 کو فرض کی راہ میں جان دی۔

آئی جی پولیس سندھ اور ایڈیشنل آئی جی کراچی سمیت دیگر پولیس افسران نے شہید ہیڈ کانسٹیبل فیاض علی کو خراج عقیدت پیش کیا۔شہریوں کی جان و مال کے تحفظ، امن و امان کے قیام، دہشتگردوں اور جرائم پیشہ عناصر کی سرکوبی کیلئے ابتک کراچی پولیس کے سینکڑوں افسران و جوانوں نے جام شہادت نوش کیا ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.